Skip to main content

Haye Jeeti Sakina Kash Tu Kuch Or Din | Noha Chehlum Skardu 2022 |Dasta Haideria Khargrong

  Haye Jeeti Sakina Kash Tu Kuch Or Din |Noha Chehlum Skardu 2022 |Noha Lyrics In English Urdu



 Haye Jeeti Sakina Kash Tu Kuch Or Din |Noha Chehlum Skardu 2022 |Noha Lyrics In Roman English 

Haye Jeete Sakina Kash Tu kuch or din agar 

Sajjad laka Jata Behn Karbala Tuja

baba Ka sar Sinapa tha tab tara saman

tuyjko tamancha lagta tha baba ka samana

ya qaidi bhai sotchta ka rota  raha tuja

Sajjad laka Jata Behn Karbala Tuja


tuj ko na laka na ja saka arman ha abb yahi

baba ka pass la chalon ma tari qabur hi

ma shamiyng ka bitch na young chorta tuja

Sajjad laka Jata Behn Karbala Tuja


pani ka kal jahng tuja qatra tha na mila

abbas ki lahad sa tu dati  agar sada

aate salam karna ko,khud alqama tuja

Sajjad laka Jata Behn Karbala Tuja


turbat sa tari kis trah khud ko uthawo ma

tu hi bata da karbala abb kasa jawo ma

Chahlum sa pahla kash na ate qaza tuja 

Sajjad laka Jata Behn Karbala Tuja


zindan ka dar pa agaya mehmil to ha magar

mazloom bhai ki tari turbat pa ha nazar

girta hn tari qabur pa daykar sada tuja

Sajjad laka Jata Behn Karbala Tuja


pehna tha apna hathon sa lakar rida tuja

Sajjad laka Jata Behn Karbala Tuja

Haye Jeete Sakina Kash Tu KUch or Din agar 


 Haye Jeeti Sakina Kash Tu Kuch Or Din |Noha Chehlum Skardu 2022 |Noha Lyrics In  Urdu Text


ہائے جیتی سکینہ کاش تو کچھ  اور دن

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ

بابا کے سر سنا پہ تھا تب کربلا تیرے سامنے

تجھکو تمانچے لگھتے تھے بابا کے سامنے

یہ قیدی بھائی سوچ کے روتا رہا تجھے

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ


تجھ کو نہ لے کے جا سکا ارمان ہے یہی

بابا کے پاس لے چلو میں تیری قبر ہی

میں شامیوں کے بیجھ نہ یوں چھوڑتا تجھ

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ


پانی کا کل جہاں تجھے قطرہ تھا نہ ملا

عباسؑ کی لحد سے تو دیتی اگر صدا

آتی سلام کرنے کو خود علقمہ تجھے

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ


تربت سے تیری کس طرح خود کو اٹھائو میں

تو ہی بتا دے کربلا اب کیسے جائو میں

چہلم سے پہلے کاش نہ اتی قضا تجھے

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ


دندان کے در پہ آگیا محفل تو ہے مگر

مظلوم بھائی کی تیری تربت پہ ہے نظر

گرتا ہوں تیرے قبر پہ دے کے صدا تجھے

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ


پہنا تھا اپنے ہاتھوں سے لیکر ردا تجھے

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ

ہائے جیتی سکینہ کاش تو کچھ  اور دن

سجادؑ لے کے جاتا بہن کربلا تجھ 

Noha Lyrics


Popular posts from this blog

Jab Jhoola Khali Paya Noha 2023

Jab Jhoola Khali Paya Noha 2023 Jab Jhoola Khali Paya Noha 2023   جب جھولا خالی پایا بانو نے کہا رو رو کر میری جان کہاں ہو اصغر اے نور نظر اے لخت جگر قربان ہو تجھ پہ مادر میری جان کہاں ہو اصغر جب تیری عمر کے بچے گزرے گے نگاہوں سے میری ڈھونڈے گی تجھے جھولے میں مادر تب یہ کہہ کہہ کر میری جان کہاں ہو اصغر تیرا عکس نظر آتا ہے پانی میں اسے اے اصغر پانی میں پیوں کیسے میں اماں کہتی ہے سکینہ اکثر میری جان کہاں ہو اصغر خواہش تھی میری یہ بیٹا تجھے چلتا ہوا دیکھیں ماں اس چھوٹی عمر میں بیٹا تو سو گیا بن میں جاکر میری جان کہاں ہو اصغر سجاد لہو روتا تھا زینب بھی تڑپ جاتی تھی جب دھوپ میں بیٹھی ماں کے آتا تھا یہی ہونٹوں پر میری جان کہاں ہو اصغر Jab Jhoola Khali Paya Noha 2023 Lyrics in Urdu jab jhoola khaali paaya Bano ne kaha ro ro kar meri jaan kahan ho asghar ae noor nazar ae lakht jigar qurbaan ho tujh pay madar meri jaan kahan ho asghar jab teri Umar ke bachay guzray ge nigahon se meri dhoonday gi tujhe jhulay mein madar tab yeh keh keh kar meri jaan kahan ho asghar tera aks nazar aata hai pani m

Bibi Zainab SA Noha Lyrics in Urdu

Bibi Zainab SA Noha Lyrics in Urdu Madeeney Se To Parday Mein Usay Abbas AS Laya Tha madeeney se to parday mein usay abbas laya tha nah jane kis terhan Zainab SA gayi Ghazi ke lashay par woh jab roti hui maqtal se guzri to uth uth kar gira ghazi tarap kar  woh bhai nah raha raha behnoon ka jo parda banata tha jo mehmil mein sahara day ke zainab ko bithaata tha nahi hai aaj is ke tan pay baazu ridaye khaak hai zainab ke sir par khudaaya kaisay is manzar ko dekha hoga zainab ne rida ke paas aake dono baazu run mein thay bikhare sinaan se gir raha tha sir musalsal behan roti thi jab abbas keh kar bas is lamhay Abir par zaefi hogayi taari lab darya jo pohanchi be rida woh dard ki maari rida is ki uthi naizay pay jis dam to ghash mein gir para abid tarap kar tera ghazi tairay parday ko bhi parday mein laya tha safar mein samnay hi day ke mehmil ko chupaya tha sir zainab pay rakh ke haath Fizh بکاء karti rahi haae muqaddar Mohammad ki nawasa ko madinah yaad aata hai usay jab tazyane maar ka